صفحۂ اول / پاکستان / بلاول بھٹو کو ایسے بیانات نہیں دینے چاہییں جن سے ان کی جماعت کو نقصان ہو: احسن اقبال
Ahsan Iqbal

بلاول بھٹو کو ایسے بیانات نہیں دینے چاہییں جن سے ان کی جماعت کو نقصان ہو: احسن اقبال

آن لائن: رہنما پاکستان مسلم لیگ ن احسن اقبال نے کہا ہے کہ بلاول بھٹو کو ایسے بیانات نہیں دینے چاہییں جن سے ان کی جماعت کو نقصان ہو۔

احسن اقبال نے کہا ہے کہ بلاول بھٹو زرداری کی اتنی عمر نہیں جتنا ہمارا سیاست میں تجربہ ہو چکا ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران نیازی عدلیہ سے کس قسم کا تعاون چاہ رہے ہیں؟ ہمارے خلاف کیسز کی براہ راست کوریج کی جائے، قوم کو پتہ چلے عمران نیازی کےپاس الف لیلیٰ کی کہانیوں کے سوا کچھ نہیں۔

حکومت کی تین سالہ کہانیوں نے ملکی معیشت تباہ کردی ہے،  یہ تین سال بعد بھی وزیرخزانہ تلاش کر رہےہیں، شخصی سحر سے نکلیں اور آنکھیں کھولیں۔  

احسن اقبال نے کہا کہ گزشتہ روز عمران خان نے قوم کے سامنے رونا رویا ،  عدالتی نظام پر حملہ کیا،  عمران نیازی فرماتے ہیں وہ اپنا ایجنڈا عدلیہ کے عدم تعاون کے باعث پورا نہیں کرپا رہے۔

عمران نیازی عدلیہ سے کس قسم کا تعاون چاہ رہے ہیں؟ کیا وہ چاہتے ہیں عدلیہ ان کے الف لیلیٰ احتساب کہانیوں پر سب کو جیل میں ڈال دے؟۔

 رہنما (ن) لیگ نے کہا کہ آج ریاست پاکستان کو شدید خطرات سے دو چار کر دیا گیا ہے،  بین الاقوامی رپورٹس آج اس بات کی نشاندہی کر رہی ہیں،ہم نے پہلے کہا تھا یہ پالیسی پاکستانی معیشت کو تباہ کر دے گی۔

 ہمارے پانچ سال کے قرضے پیداواری نوعیت کے تھے، موٹر ویز اور سی پیک کے منصوبے بنے ملکی ترقی ہوئی، موٹر ویز اور سی پیک کے منصوبے بنے ملکی ترقی ہوئی،  ہمارے پانچ سال سے زیادہ عمران نیازی نے سوا دو سال میں قرض لیا۔

 عمران نیازی نے غیر پیداواری قرضہ خسارا پورا کرنے کیلئے لیا،  اس قرض کے ذریعے ہمیں بلیک میل کیا جا سکتا ہے،  ہماری خودمختاری داؤ پر لگ چکی ہے۔

 اب ہماری قسمت کے فیصلے آئی ایم ایف کے بابو کریں گے۔

احسن اقبال نے کہا کہ ملک کو 5 اعشاریہ 8 فیصد ترقی سے منفی میں لے جایا گیا،  وزیر منصوبہ بندی اسد عمر کہتے ہیں سی پیک کامیابی سے چل رہا ہے،  کون سا ایک منصوبہ ہے جو ہمارے بعد آپ نے شروع کیا۔

 ہم نے نیشنل ہائی وے اتھارٹی کو 400 ارب کا بجٹ دیا، آپ نے وہ بجٹ کم کر کے ایک سو ارب کر دیا۔ آٹھ ماہ میں انہوں نے اس سو ارب سے بھی پچاس ارب ہی دیئے ہیں۔