صفحۂ اول / پاکستان / عمران خان ایسا کھلاڑی ہے جسے تماشائی جلداسٹیڈیم سے اٹھا کرباہر پھینک دیں گے۔ نواز شریف
Latest Update

عمران خان ایسا کھلاڑی ہے جسے تماشائی جلداسٹیڈیم سے اٹھا کرباہر پھینک دیں گے۔ نواز شریف

Urdu Breaking News

لاہور(ویب ڈیسک): پاکستان مسلم لیگ ن کےقائد اور سابق وزیراعظم میاں نوازشریف کاکہنا ہے کہ “میں کوئی ولی ، پیر یاقسمت کاحال بتانے والا نہیں، لیکن عمران خان جلد انجام کوپہنچنے والے ہیں، عمران خان ایسا کھلاڑی ہے جسے تماشائی جلد اسٹیڈیم سے باہر پھینک دیں گے۔

نجی ٹی وی “جیونیوز” کےمطابق کوٹ لکھپت جیل میں آج جمعرات کو ملاقات کرنے والوں سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیراعظم نوازشریف نے کہا کہ عمران خان اور علیمہ خان کے خلاف ٹھوس چارجز موجود ہیں ان کا جلد کڑا احتساب ہوگا۔انہوں نے وزیراعظم پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان ایسا کھلاڑی ہے جسے تماشائی جلد اسٹیڈیم سے باہر پھینک دیں گے ان کا بنی گالہ کرپشن کی دلدل میں پھنسا ہوا ہے۔ امپائر کی انگلی کی بات کرنے والے عمران خان کو شرم آنی چاہیے وہ کھیل کے دوران ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کررہا ہے۔

میاں نوازشریف  کا کہنا تھا کہ ہم عوامی مینڈیٹ سے آئے اور یہ عوامی مینڈیٹ سے محروم ہیں میں ولی پیر یا قسمت کا حال بتانے والا نہیں لیکن عمران خان جلد انجام کو پہنچنے والے ہیں۔ عمران خان بے انتظامی اور نااہلی چھپانے کے لیے سابق حکومت پر الزام لگارہے ہیں ان کی نااہلی نے ملک کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا۔نوازشریف نے مزید کہا کہ ہمارے دور میں بھارتی وزیراعظم خود چل کر پاکستان آئے بھارتی وزیراعظم کو کسی نے حلف برداری میں بھی نہیں بلایا۔ہم نے ایٹمی دھماکے کیے تو دنیا کو پاکستان کی اہمیت کا اندازہ ہوا جب کوئی خود اندر جانے والا ہوتا ہے تو وہ پہلے دوسرے کو اندر بھیجتا ہے موجودہ حکومت بلاوجہ بڑے سیاستدانوں کو جیل بھیج رہی ہے۔

سابق وزیراعظم کاکہنا تھا کہ ہم نے آئی ایم ایف کو خیر باد کہہ دیا تھا اور یہ ان کے سامنے جھک رہے ہیں مسلم لیگ (ن) نے بھرے ہوئے خزانے چھوڑے، موٹروے بنائیں، ہم نے دہشت گردی اور مہنگائی کم کی، ملک میں بجلی بجلی کردی، عمران خان کہتے تھے خود کشی کرلوں گا آئی ایم ایف کے پاس نہیں جاؤں گا۔ انہوں نے خود کشی تو نہیں کی مگر قوم کو خود کشی پر مجبور کردیا۔ سابق وزیراعظم نے کہا کہ ہمارے دور میں ڈالر کنٹرول میں رہا اور غیر ملکی ذخائر بڑھے، تیل کی قیمت کم ہوئی، ہمارے دور میں ترقی کی شرح 5 اعشاریہ 8 فیصد تک پہنچ چکی تھی اب ان کے دور میں ترقی کی شرح 4 فیصد بھی نہیں رہی۔

انہوں نےکہا کہ عمران خان سلیکٹڈ وزیراعظم نہ ہوتے تو آج ملک کی حالت بہتر ہوتی انہوں نے 10 ماہ میں قوم کو مایوس کردیا۔ ہمارے دور میں ضروریات زندگی کی ہر چیز سستی تھی لیکن آج عوام کی چیخیں نکل رہی ہیں۔

مزید خبریں